چین سے شروع ہونے والا کورونا وائرس اب دنیا کے ١٤٥ ممالک میں پھیل چکا ہے
پاکستان میں اس وقت ١٣٦ افراد میں  کورونا وائرس کی موجودگی کی تشخیص ہو چکی ہے جن میں زیادہ تعداد
صوبہ سندھ سے ہے جہاں تعداد 
خیبر پختون خواہ کے وزیر صحت تیمور سلیم جھگڑا نے ایک ٹویٹ میں بتایا کے تفتان سے آنے والے انیس میں سے پندرہ افراد میں کورونا وائرس کی تصدیق ہو چکی ہے اور ان افراد کو ڈیرہ اسماعیل خان میں قرنطینہ میں رکھا گیا ہے   
 
کورونا وائرس کی دہشت اس قدر زیادہ ہے کے لوگ اب احتیاطی طور پر بھی اپنا ٹیسٹ کروا رہے ہیں مگر حکومتی لیبز  صرف ان افراد کے ٹیسٹ کرتی ہیں جنہوں نے ماضی قریب میں بیرون ملک سفر کیا ہو 
 
اس لئے عام لوگوں کو ٹیسٹ کروانے کے لئے پرائیویٹ لیبا ٹریوں کا رخ کر رہے ہیں جو کے فی ٹیسٹ ٩٠٠٠ تک چارج کر رہے ہیں.
 
اس حوالے سے وزیر اعظم کے معاون خصوصی براۓ صحت ڈاکٹر ظفر مرزا نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کے لوگ غیر ضروری طور پر ٹیسٹ کروانے سے گریز کریں کیوں کے تشخیصی کٹس ایک محدود تعداد میں درآمد کی جاتی ہیں.
 
ان کا مزید کہنا تھا کے صرف وہ افراد ہی اپنا ٹیسٹ کروائیں جنہوں نے یا خود ماضی قریب میں بیرون ملک سفر کیا ہو یا ان کا کوئی قریبی عزیز باہر سے وطن واپس آیا ہو اور اس میں وائرس کی علامات ظاہر ہوئی ہوں
 
ڈاکٹر ظفر مرزا کا کہنا تھا کہ  مہنگے ٹیسٹس کا معاملہ انکے نوٹس میں ہے اور اس حوالے سے جلد ہی ایک ایڈوائزی  جاری کیا جاے گا جس میں کورونا وائرس کے ٹیسٹ کے لئے چند لیبا ٹریوں کو مختص کیا جاے گا اور ٹیسٹ کی فیس کی بھی حد مقرر کی جاے گی
 
پنجاب میں کورونا وائرس کے ٹیسٹ کے حوالے سےڈائریکٹر جنرل ہیلتھ ڈاکٹر ہارون نے بتایا کے اس وقت صوبہ میں ١١٠٠ ٹیسٹ کٹس موجود ہیں اور اس حوالے سے تمام ٹیچنگ ہسپتالوں میں سہولت موجود ہے
 
پشاور سے ہمارے نامہ نگار کے مطابق حکومت نے پرائیویٹ  لیبا ٹریوں کو کورونا کے ٹیسٹ کرنے سے روک دیا ہے اور اس حوالے سے ادارہ براۓ قومی صحت کے تعاون سے خیبر ٹیچنگ ہسپتال میں ٹیسٹ کیے جا رہے ہیں
 
بلوچستان سے وائس پی کے ڈاٹ نیٹ کے نامہ نگار کے مطابق کوئٹہ اور تفتان میں مشتبہ افراد کے ٹیسٹ لینے کیلئے لیبارٹریز قائم کی گئی ہیں مگر ٹیسٹنگ کٹس کی قلت ہے اب تک صوبے میں صرف 70 کے ٹیسٹ ہی لئے جاسکے ہیں
کوئٹہ کے قرنطینہ سینٹر میں موجود 500 سے زائد زائرین نے تفتان اور کوئٹہ میں کوراینٹائن مکمل کرلیا مگر تاحال نہ تو انکے حتمی ٹیسٹ لئے گئے اور نہ ہی انہیں گھروں کو جانے کی اجازت دی گئی ہے
 
طبی ماہرین کا کہنا ہے کے عوام الناس کو کورونا وائرس سے گھبرانے کی ضرورت نہیں اور اس سے بچنے کے لئے بتائی گی احتیاطی تدابیر پر عمل کریں